مقامی سطح پر تیار کردہ کورونا ویکسین فروری میں دستیاب ہوگی، بھارت

کوویکسین اور کوی شیلڈ نامی ویکسینز کے فروری تک دستیابی کی امید ہے، وزیر صحت (فوٹو : فائل)

کوویکسین اور کوی شیلڈ نامی ویکسینز کے فروری تک دستیابی کی امید ہے، وزیر صحت (فوٹو : فائل)

دہلی: بھارت میں تیار کردہ کورونا وائرس کی ویکسین آئندہ برس فروری تک مارکیٹ میں دستیاب ہو گی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ اور بھارت بائیوٹیک لمیٹڈ کے اشتراک سے تیار ہونے والی کورونا ویکسن ’’ کوویکسین‘‘ دو ماہ بعد فروری میں شہریوں کے لیے دستیاب ہوگی۔

آل انڈیا انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنس سربراہ ڈاکٹر سنجے راؤ نے میڈیا کو بتایا کہ اس وقت دو کورونا ویکسین کے ٹرائل جاری ہیں۔ بھارت بائیوٹیک کی ’’ کو ویکسین ‘‘ اور سیرم انسٹیٹیوٹ آف انڈیا ’’ کووی شیلڈ ‘‘ کے ٹرائل آخری مراحل میں ہیں۔

ویکسین کے ٹرائل کے آخری مرحلے میں 26 ہزار رضاکاروں کو ویکسین اس طرح دی جائیں گی کہ کمپنی کو بھی نہیں پتہ نہیں ہوگا کس کو ویکسین لگائی گئی ہے اور کسے پلاسیبیو یعنی دوا کے نام پر دیا جانے والا بے ضرر مادہ جس میں دوا موجود نہیں ہوتی۔

ڈاکٹر سنجے رائے کے دعوے ایک طرف لیکن یاد رہے کہ’’کوویکسین‘‘ کا ٹیکہ لگانے کے دو ہفتے بعد ہی ہاریانہ کے وزیر صحت انیل وج کا کورونا ٹیسٹ آگیا تھا۔ بھاترت میں 8 کورونا ویکسین کی تیاری جاری ہے تاہم دو ہی آخری مرحلے میں داخل ہوسکی ہیں۔

واضح رہے کہ قبل ازیں انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ کے سربراہ ڈاکٹر بلرام بھرگاوا نے بھارت بائیوٹیک انڈیا کے اشتراک سے کورونا ویکسین 15 اگست تک تیار کرنے کا دعویٰ کیا تھا، عالمی ادارہ صحت سمیت بھارتی ماہرین نے بھی اس دعوے کو مضحکہ خیز قرار دیا تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

ur Urdu
X
براہ راست